ذیشان خان

Administrator
سلف کی طرف حقیقی نسبت باعث شرف ہے

تحریر: حافظ عبدالرشید عمری

سلف سے مراد قرون مفضلہ کے لوگ ہیں،
عہد نبوی عہد صحابہ اور عہد تابعین ان تینوں زمانوں کی فضیلت اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ و سلم نے بیان فرمائی ہے،

(3650) حَدَّثَنِي إِسْحَاقُ ، حَدَّثَنَا النَّضْرُ ، أَخْبَرَنَا شُعْبَةُ ، عَنْ أَبِي جَمْرَةَ ، سَمِعْتُ زَهْدَمَ بْنَ مُضَرِّبٍ ، سَمِعْتُ عِمْرَانَ بْنَ حُصَيْنٍ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُمَا يَقُولُ : قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ : " خَيْرُ أُمَّتِي قَرْنِي، ثُمَّ الَّذِينَ يَلُونَهُمْ، ثُمَّ الَّذِينَ يَلُونَهُمْ - قَالَ عِمْرَانُ : فَلَا أَدْرِي ؛ أَذَكَرَ بَعْدَ قَرْنِهِ قَرْنَيْنِ، أَوْ ثَلَاثًا ؟ - ثُمَّ إِنَّ بَعْدَكُمْ قَوْمًا، يَشْهَدُونَ وَلَا يُسْتَشْهَدُونَ ، وَيَخُونُونَ وَلَا يُؤْتَمَنُونَ، وَيَنْذُرُونَ وَلَا يَفُونَ، وَيَظْهَرُ فِيهِمُ السِّمَنُ ".
(صحيح البخاري: كتاب فضائل أصحاب النبي صلى الله عليه وسلم، باب فضائل أصحاب النبي صلى الله عليه وسلم. )

قرآن و سنت کے نصوص کا صحیح علم ، فہم سلف پر ہی موقوف ہے،
اہل سنت و جماعت اور سارے گمراہ فرقوں کے درمیان منھج سلف اور فہم سلف ہی حد فاصل کی حیثیت رکھتا ہے،
کیوں کہ گمراہ فرقوں کے عوام و خواص،فہم سلف کو نظر انداز کرتے ہوئے،صرف عربی زبان ، عقلی دلائل اور گمراہ فرقوں کے علماء کے اقوال کی روشنی میں قرآن و سنت کے نصوص کو سمجھنے کی کوشش کرتے ہیں،
اسی لئے وہ گمراہی کی گہری وادیوں میں حیران و پریشان ہو کر بھٹکتے رہتے ہیں،

منہج سلف کے حاملین اپنے جذبہء سلفیت کو تقویت پہنچا نے کے لئے قرون مفضلہ سے لے کر آج تک لکھی جانے والی کتابوں میں سے صرف اور صرف علماء سلف ہی کی کتابوں کا مطالعہ جاری رکھیں،
پہلی صدی ہجری سے لے کر پندرہویں صدی ہجری تک ہر صدی میں منھج سلف سے وابستگی رکھنے والے علماء کرام سے کوئی دور خالی نہیں رہا ہے،
اور کتابوں کے صحیح انتخاب میں مستند علماء کرام رہنمائی بھی کرتے رہتے ہیں،
ہر صدی میں منھج سلف کے حامل علماء کرام کو اور ان کی کتابوں کو تلاش کیا جائے،
خصوصی طور پر آٹھویں صدی ہجری کے معروف ومشہور علماء کرام علامہ ابن تیمیہ، علامہ ابن قیم، علامہ ابن رجب الحنبلی، مفسر قرآن علامہ ابن کثیر اور محدث و مؤرخ علامہ ذہبی رحمہم اللہ ہیں،
اسی طرح نویں صدی ہجری کے عالم دین شارح صحیح البخاری فتح الباری کے مؤلف حافظ ابن حجر عسقلانی رحمہ اللہ ہیں،
اور تیرہویں ،چودھویں اور پندرہویں ان تین ہجری صدیوں میں بھی منھج سلف سے وابستہ عرب و عجم کے بہت سے علماء کرام رہے ہیں،
جیسے علامہ محمد بن عبدالوهاب، علامہ شوکانی، علامہ نواب صدیق حسن خان ،علامہ عبدالرحمن بن ناصر السعدي، علامہ شنقیطی، علامہ ابن باز،علامہ ابن عثيمين، ، محدث یمن علامہ مقبل بن ھادی الوادعی محدث عصر علامہ البانی رحمہم اللہ مذکورہ علماء علم کے بحر بے کراں تھے،
اسی طرح بر صغیر کے معروف ومشہور سلفی علماء کرام اور ان کی علمی خدمات سے واقف ہونے کے لئے مؤرخ اہل حدیث محمد اسحاق بھٹی رحمہ اللہ کی علماء اہل حدیث کی سیرتوں پر لکھی جانے والی کتابوں کا مطالعہ کیا جائے،
اسی طرح بقید حیات عرب اور پاک وہند کے معروف ومشہور سلفی علماء ہیں،
ان کی کتابوں سے ،ان کے ویڈیو اور آڈیو میں موجود علمی دروس اور خطابات سے بھی استفادہ کیا جائے،
جزائر کے ایک معروف ومشہور مستند سلفی عالم دین علامہ محمد علی فرکوس حفظہ اللہ ہیں،
جزائر کے چند وفات شدہ سلفی علماء بھی معروف ومشہور ہیں،
بقید حیات مصر کے مستند سلفی عالم دین علامہ محمد بن سعید رسلان حفظہ اللہ ہیں،

ہم علماء کرام کو سلفیت عام کرنا ہے، تو اپنی تقریر وتحرير میں مثبت اسلوب اور ناصحانہ انداز بیان اپنانے کی ضرورت ہے،
مخاطب اور قاری یہ محسوس کرنے پر مجبور ہو جائے کہ یہ ہمارا سچا خیرخواہ اور ہمدرد ہے،
منفی انداز بیان سے لوگ بد ظنی کا شکار ہو کر یہ سمجھیں گے کہ دوسرے مسالک کے پیروکاروں کی طرح یہ علماء بھی اپنے مسلک کی اشاعت اور ترویج میں مصروف عمل ہیں،
حالانکہ منھج سلف کسی متعین شخصیت کی طرف منسوب مسلک کا نام نہیں ہے ،
بلکہ سلف کی طرف حقیقی انتساب تو اسلام کی صحیح تفہیم کے لئے از حد ضروری ہے،
اس لئے ہم منھج سلف کے حامل عوام و خواص منھج سلف عام کرنے اور سارے مسلمانوں کے روبرو منھج سلف کی اہمیت اور ضرورت کو اجاگر کرنے کے لئے اپنے اخلاق و کردار سے اور ناصحانہ انداز بیان سے اور مثبت اسلوب بیان سے ایسا تاثر ان کے ذہنوں میں چھوڑیں،کہ ان کے دلوں میں یہ یقین راسخ ہو جائے کہ اس عالم دین کو قرآن و حدیث کے صحیح علم و فہم سے سچا لگاؤ ہے،
اسی لئے وہ قرآن وحديث کے صحیح علم و فہم کو سمجھانے کی کوشش کر رہا ہے اور قرآن وسنت کے صحیح علم و فہم کے مطابق زندگی گزارنے پر ہم کو بھی ابھاررہا ہے،
یہ ہمارا سچا خیرخواہ اور ہمدرد ہے ۔

منھج سلف اور فہم سلف کی، حقیقت، فضیلت، اہمیت اور ضرورت کو اجاگر کرنے کے سلسلے میں عرب و عجم کے علماء کرام نے مفید اور مستند اور محقق کتابیں لکھی ہیں،
ان کتابوں کا مطالعہ سلفی علماء کرام کو بغور کرنا چاہئے۔

اللہ تعالٰی ہم اہل حدیث اور سلفی علماء کرام کو ناصحانہ انداز بیان اور مثبت اسلوب اختیار کرتے ہوئے منھج سلف اور فہم سلف کی اہمیت کو اجاگر کرنے کی توفیق عطا فرمائے، آمین ۔
 
Top