ذیشان خان

Administrator
المُهَلَّب بن أبي صُفْرَة

✍️
فاروق عبد اللہ نراین پوری

جنہوں نے بھی فتح الباری کا مطالعہ کیا ہوگا اس نام کو بارہا پڑھا ہوگا۔
آپ کا مکمل نام ونسب ہے: أبو القاسم المهلب بن أحمد أسيد بن عبد الله بن أبي صفرة الأسدي, الأندلسي, المَرِيِّي, القاضي.
آپ بیک وقت فقیہ ومحدث تھے۔ فقہائے مالکیہ میں آپ کا شمار ہوتا ہے۔
آپ صحیح بخاری کے قدیم شارحین میں سے ہیں۔ آپ نے صحیح بخاری کے اختصار اور شرح دونوں کا کام کیا ہے۔
اختصار کا نام ہے: «الْمُخْتَصَرُ النَّصِيحُ فِي تَهْذِيبِ الْكِتَابِ الْجَامِعِ الْصَّحِيحِ»
اور شرح کا نام ہے: «الكوكب الساري في شرح صحيح البخاري»
المختصر النصیح الحمد للہ چھپ گئی ہے۔ لیکن شرح ابھی تک غیر مطبوع ہے۔ اس کا تھوڑا سا حصہ مخطوط کی شکل میں حرم مکی میں موجود ہے۔ لیکن اکثر حصہ مفقود ہے۔
صحیح بخاری کے ساتھ آپ کے اہتمام کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ اصیلی، قابسی اور ابو ذر الہروی جیسے صحیح بخاری کے مشہور روات کے آپ شاگرد رشید ہیں۔ بلکہ ابو محمد الاصیلی آپ کے سسر تھے۔
آپ ہی کے ذریعہ اندلس میں صحیح بخاری پھیلی، زندگی بھر اس کی درس وتدریس سے جڑے رہے۔ نیز اس کا اختصار بھی کیا، اور شرح بھی لکھی۔
اور اندلس ہی میں سنہ 435 ھ میں آپ کی وفات ہوئی۔ رحمہ اللہ رحمۃ واسعۃ۔
آپ کے بعد جنہوں نے بھی صحیح بخاری کی شرح لکھی آپ کی شرح سے ضرور استفادہ کیا۔ خصوصا حافظ ابن حجر نے فتح الباری میں، عینی نے عمدۃ القاری میں، اور قسطلانی نے ارشاد الساری میں سینکڑوں جگہوں پر آپ کے اقوال کو نقل کیا ہے۔
••••••••
ایک مہلب بن ابی صفرہ وہ ہیں جو اموی دور کے سپہ سالار اور طبرستان اور خوارزم کے فاتح ہیں۔ حجاج کے دور میں کئی صوبوں کے گورنر بھی رہے۔ 82 یا 83 ہجری میں ان کی وفات ہوئی۔ آپ نے مشرکین کے علاوہ خوارج کے خلاف بھی ہمیشہ علم جہاد بلند رکھا۔
یہ رہی ویکیپیڈیا لنک
https://ar.wikipedia.org/.../%D8%A7%D9%84%D9%85%D9%87%D9...
✍
کاشف شکیل
 
Top