ذیشان خان

Administrator
تراویح سے متعلق كچھ اہم باتیں

✍⁩ ڈاکٹر أمان الله محمد إسماعيل مدنی.

* محدثین کے نزدیک قیام اللیل، تہجد اور تراویح ایک ہی نماز کے متعدد نام ہیں۔
* نصوص وحی میں تراویح کی اہمیت و فضیلت بہت زیادہ ہے، رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا : "من قام رمضان ايمانا واحتسابا غفر له ما تقدم من ذنبه "(صحيح بخاری).
* معلوم ہوا کہ تراویح کے اہتمام کرنے سے پچھلے تمام گناہ معاف ہو جاتے ہیں۔
* علماء کرام کا اتفاق ہیکہ تراویح واجب وضروری نہیں ہے، بلکہ سنت ہے، جب کہ بعض نے اسے سنت موکدہ کہا ہے ۔
* تراویح جماعت کے ساتھ پڑھنا زیادہ بہتر ہے، لیکن تنہا پڑھنا بھی ثابت ہے۔
* اگر کسی وجہ سے کوئی تراویح نہ پڑھ سکے تو اس کے روزے پر کوئی اثر نہیں پڑیگا۔
* تراویح میں قرآن ختم کرنا اچھا عمل ہے، البتہ واجب وضروری نہیں ہے۔
* تراویح میں ختم قرآن کو سنت سمجھنا بے تکی اور بے دلیل بات ہے؛ کیونکہ آپ صلی اللہ علیہ و سلم اور صحابہ کرام کے زمانے میں اس کا کبھی کوئی اہتمام نہیں ہوا ہے۔
* تراویح کا اہتمام کرنا چاہئے، البتہ اگر کوئی تراویح کی نماز چھوڑ دیتا ہے تو وہ گنہگار نہیں ہوگا ؛ کیونکہ یہ واجب و ضروری نہیں ہے، اور سنت چھوڑنے سے کوئی گنہگار نہیں ہوتا ہے۔
* اللہ تعالی ہمیں نصوص کو صحیح طور پر سمجھنے کی توفیق بخشے ۔ آمین ۔
 
Top