نجات کا راستہ

علی بن ابی طالب رضی اللہ عنہ نے فرمایا:

مجھے تعجب ہے اس شخص پر جو ہلاک ہو رہا ہے اور نجات کا راستہ اس کے ساتھ ہے، کہا گیا: وہ کیا ہے؟ کہا: نجات کا راستہ استغفار ہے۔
(عیون الاخبار: 1/686)

قرآن مجید میں اللہ تعالیٰ نے فرمایا:
وَمَا كَانَ ٱللَّهُ مُعَذِّبَهُمۡ وَهُمۡ یَسۡتَغۡفِرُونَ﴾ [الأنفال ٣٣]
اور اللہ انھیں کبھی عذاب دینے والا نہیں جب کہ وہ استغفار کرتے ہوں۔

استغفار، غم و فکر، دکھ درد، مصائب ومشکلات اور آفات وبلیات سے حفاظت کا اہم ذریعہ ہے، اس لئے بکثرت ہمیں استغفار کو لازم پکڑنا چاہئے۔

اللہ تعالیٰ ہم سب کو نیک توفیق عطا فرمائے آمین
(ابو حمدان اشرف فیضی رائیدرگ)
 
Top