اسلامی بھائیو!

مرد کو عورت کی اور عورت کو مرد کی مشابہت اختیار کرنا۔۔۔۔

مرد ہو یا عورت اللہ نے ہر ایک کی فطرت متعین کیا ہے، اور ہر ایک کے لئے اس کی مناسبت سے کام بھی خاص کیا ہے، پس جو لوگ اس پر قائم رہتے ہیں اور عمل کرتے ہیں ان کے لیے مبارکبادی ہے۔
اور جو لوگ اس کی فطرت سے اس کی پیدائشی شکل و صورت سے نکل جاتے ہیں، وہ زمین میں فساد برپا کرتے ہیں، کیونکہ اللہ علیم ہے ہر چیز کو اچھی طرح جانتا ہے اور خبیر ہے یعنی پوشیدہ راز کو بھی جانتا ہے، اس نے جو چیز جس طرح سے پیدا کیا ہے اس کا سبب اسے معلوم ہے ۔

آج کثیر تعداد ہے ایسے نوجوان لڑکوں لڑکیوں کی ہے جو اپنے علاوہ کی جنس سے مشابہت اختیار کرتے ہیں، لباس پہننے میں، شکل و صورت میں، اور کام بھی ایسے کرتے ہیں جو اس کی فطرت سے ٹکراتا ہے، اور مرد و عورت میں ایک دوسرے کے لیے فساد کا باعث ہے ۔
اسی لئے اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم نے ایسے لوگوں پر لعنت بھیجی ہے۔

قال النبي صلى الله عليه وسلم: «لعن الله المتشبهين من الرجال بالنساء والمتشبهات من النساء بالرجال»".

(مشکاۃ المصابيح 2/ 1262)

ترجمہ: ابن عباس رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں: رسولِ کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: اللہ تعالی کی لعنت ہے ان مردوں پر جو عورتوں کی مشابہت اختیارکرتے ہیں اور ان عورتوں پر جومردوں کی مشابہت اختیار کرتی ہیں
(ابو داوٴد 4097 )
دوسری حدیث میں آپ نے فرمایا

لعن رسول الله صلى الله عليه وسلم الرجل يلبس لبسة المرأة والمرأة تلبس لبسة الرجل"(ابوداؤد، ح: 4098)

’’اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم نے لعنت کی ہے ایسے مرد پر جو عورت جیسا لباس پہنے اور ایسی عورت پر جو مرد جیسا لباس پہنے۔‘‘

عائشہ رضی اللہ عنہا سے کہا گیا کہ ایک عورت (مردوں جیسا) جوتا پہنتی ہے (اس کے بارے میں شریعت کا کیا حکم ہے؟) تو وہ فرماتی ہیں:

"لعن رسول الله الرجلة من النساء"

’’اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم نے مردوں کی طرح بننے والی عورت پر لعنت کی ہے۔
( ابو داوٴد )

فوائد
1- ان احادیث میں ہمیں ڈرایا گیا ہے کہ نہ مرد عورت کی مشابہت اختیار کرے، اور نہ عورت مرد کی مشابہت اختیار کرے ۔

2- اگر کوئی مشابہت اختیار کرتا ہے تو اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کی لعنت ہے ایسے شخص پہ ۔
3- اسی طرح ان احادیث سے یہ بھی معلوم ہوا کہ یہ کبیرہ گناہوں میں سے ہے ۔
اللہ رب العالمین ہم سب کو ان حرام کاموں سے محفوظ رکھے۔ آمین ۔

صفی الرحمن ابن مسلم فیضی بندوی
جامع عمار بن یاسر۔ الجبیل۔ سعودی عرب
 
Top