ذیشان خان

Administrator
ٹھوس، پختہ اور گہرا علم حاصل کرو

✍⁩ حافظ عبدالرشید عمری

شیخ صالح آل الشيخ حفظہ اللہ کہتے ہیں:
آج امت مسلمہ کو راسخ اور وسیع و عمیق علم کے حامل علماء کرام کی سخت ضرورت ہے،
جو علم حاصل کیا جائے اس میں کامل یقین ہو،
اسی یقینی علم کی دعوت دی جائے،
جو نصف علم کے حامل ہوتے ہیں،
جن کو ایک چیز کا علم ہوتا ہے
اور ان سے کئی چیزیں غائب ہوتی ہیں،
درحقیقت نصف علم اور غیر راسخ علم کے حامل اس قسم کے علماء ہی شریعت کو نقصان پہنچاتے ہیں، اور دین میں وہ چیزیں داخل کر دیتے ہیں،
جو دین کا حصہ نہیں ہوتے ہیں،

ہم علماء کی جماعت کو علم دین بھی حاصل کرنا ہے،
اور اس کی تبلیغ بھی کرنا ہے،
تو علم کی تبلیغ نصف علم اور جہالت کے ساتھ نہیں ہوگی،
تبلیغ کے لئے ٹھوس، پختہ اور گہرا علم مطلوب ہے،
کتنے ہی علماء ہیں جو شرعی علوم کے کلیہ سے فارغ ہوتے ہیں،
تو پھر علم کی حفاظت کے لئے علمی کتابوں کا مراجعہ اور مطالعہ نہیں کرتے ہیں،
ان کی علمی حالت سے ایسامحسوس ہوتا ہے کہ انہوں نے کبھی علم حاصل ہی نہیں کیا ہے،
جب علماء لوگوں کو مسئلے مسائل بتانے کے منصب پر فائز ہیں،
تو ان کو ٹھوس ،پختہ اور گہرا علم حاصل کرنا ضروری ہے،
کیوں کہ شریعت کے مسائل بتانا
درحقیقت اللہ کے احکام کو نقل کرنا ہے،
تم اللہ کی عطا کردہ صلاحیت اور ذہانت کو بروئے کار لاتے ہوئے پوری تندہی کے ساتھ ٹھوس، پختہ اور گہرا علم حاصل کرو،
اللہ تعالٰی جانتا ہے کہ تم حصول علم میں کتنی محنت و مشقت برداشت کر رہے ہو،
تو اللہ تعالٰی تم کو گہرے علم سے ہمکنار کرے گا۔

مختصر ویڈیو کلپ کی اردو ترجمانی:

 
Top