سوال: اگر کوئی شخص سورت کے درمیان سے قرآن کی تلاوت کرے تو کیا بسم اللہ پڑھے گا یا صرف اعوذ بالله من الشيطان الرجيم پڑھے گا؟

جواب: اگر سورت کے درمیان سے پڑھے گا تو صرف أعوذ بالله من الشيطان الربيع پڑھے گا،
بسم اللہ نہیں پڑھے گا
کیونکہ اللہ تعالیٰ کا فرمان ہے:

﴿فَإِذَا قَرَأۡتَ ٱلۡقُرۡءَانَ فَٱسۡتَعِذۡ بِٱللَّهِ مِنَ ٱلشَّیۡطَـٰنِ ٱلرَّجِیمِ﴾
[النحل ٩٨]

اور اگر سورت کے شروع سے پڑھے گا تو أعوذ بالله کے ساتھ بسم اللہ بھی پڑھے گا، سوائے سورہ توبہ کے شروع میں کیونکہ سورہ توبہ کے شروع میں بسم اللہ پڑھنا مشروع نہیں ہے۔

وبالله التوفيق
[ اللجنة الدائمة للبحوث العلمية: ج ٢/(٣/٩٤]

ابو حمدان اشرف فیضی
جامعہ محمدیہ عربیہ رائیدرگ، آندھرا پردیشIMG_20220224_204835.jpg
 
Top