ذیشان خان

Administrator
واٹس اپ اور قرآنی آیات و احادیث

لوگوں میں ایک امیج کے ذریعہ یہ خبر عام ہے جس میں یہ کہا گیا ہے کہ واٹس ایپ اسلام سے خارج کر رہا ہے.
ساتھ ہی یہ کہاگیا ہے کہ سعودی عرب سے یہ فتوی شائع کیا گیا ہے.
یہ باتیں بے بنیاد ہیں ، ان پر دهیان نہ دیا جائے .
البتہ واٹس ایپ کے متعلق دو باتیں جو کافی چرچہ میں ہیں اور پھیلائے جانے والے ہندی امیج میں بهی خطرناک بتلایا گیا ہے. اس کا میں نیچے حل پیش کرتا ہوں.
(1) پہلا مسئلہ واٹس ایپ کے ذریعہ آیت یا حدیث سینڈ کرنے کا ہے.
اس کا جواب یہ ہے کہ 👇
آپ آیت یا حدیث کا ترجمہ تو لکھ کر فاورڈ کر سکتے ہیں لیکن کسی آیت یا حدیث کا متن رومن اردو میں لکھ کر فارورڈ نہ کریں۔ قرآن مجید تو اس لیے کہ اس کو بغیر رسم عثمانی کے لکھنا ممنوع ہے اور اس پر امت کا اتفاق ہے جبکہ حدیث کو عربی رسم کے بغیر لکھنے میں اس میں تحریف کے امکانات نکلتے ہیں۔
(2) دوسرا مسئلہ واٹس ایپ سے یا موبائل میموری سے آیات و احادیث ڈیلیٹ کرنے کا ہے.
اس کا جواب یہ ہے کہ 👇
ایسا کرنے میں کوئی حرج نہیں ہے، کیونکہ یہ ایک مجبوری ہے ، ورنہ میموری فل ہوجانے پر کوئی نیا میسج نہیں آئے گا ۔ یہ ایسے ہی ہے جیسے آپ موبائل بند کردیں، یا آپ گھر کے کمپیوٹر سے کوئی تلاوت وغیرہ ڈیلیٹ کر دیں یا کمپیوٹر بند کر دیں۔ لیکن یاد رہے کہ ڈیلیٹ کرنے میں نفرت یا بغض شامل نہیں ہونا چاہئے، بلکہ احترام کے پیش نظر یہ امر انجام دینا چاہئے۔
آپ کا بهائی
مقبول احمد سلفی
 
Top