ذیشان خان

Administrator
کیا اختلاف صرف اہل حدیث علماء میں ہیں؟

*تحریر : عبدالخبیر السلفی

جو ایسے مسائل میں ایسا کرتا ہے حقیقت میں وہ اہل حدیث نہیں ہے

عام طور سے یہ تاثر دیا جاتا ہے اہل حدیث علماء میں بہت اختلاف ہے رویت ہلال میں اختلاف، بھینس کی قربانی میں اختلاف چار دن قربانی میں اختلاف وغیرہا
تو یاد رکھیں! اختلاف علم کی دلیل ہے جہل میں کوئی اختلاف نہیں ہوتا، صحابہ کرام و تابعین اور ان کے بعد ائمہ مجتہدین کے درمیان بھی اختلاف رہا ہے ہاں اجتہادی اختلاف میں تفسیق و تکفیر ضرور معیوب ہے الحمد للہ اکثر اہل حدیث علماء اس سے پرہیز کرتے ہیں
عام طور پر یہ بات کہی جاتی ہے اہل حدیث علماء میں بہت اختلاف ہوتا ہے اور دیگر لوگوں میں نہیں لیکن یہ بات علم کی کمی کی دلیل ہے
اہل تقلید کے گروپ جو اختلاف سے بچنے کے لئے قائم کئے گئے تھے ان کے درمیان زبردست اختلاف ہیں کفر و اسلام تک کا اختلاف ہے ہمارے یہاں ہندوستان میں احناف کی اکثریت ہے اب ان کے درمیان دیکھ لیجیے کتنا اختلاف ہے بریلوی دیوبندی اور جماعت اسلامی کا اختلاف، دیوبندی میں حیاتی و مماتي کا اختلاف پھر اس میں تبلیغی اور غیر تبلیغی کا اختلاف، بریلویوں میں دسیوں گروہ بندیاں ہیں بریلوی قادری بدایونی قادری کا اختلاف ثقلینی، شیری، مداری کا اختلاف، دعوت اسلامی اور رضویت کا اختلاف وغیرہ وغیرہ
جماعت اسلامی میں مودودی اور ڈاکٹر اسرار صاحب کا اختلاف رفاہی اور اصلاحی کا اختلاف وحید الدین خان کا اختلاف غرض اگر احاطہ کیا جائے تو ابھی بے شمار اختلافات صرف احناف ہند میں موجود ہیں اور ان میں اکثر معمولی اختلاف نہیں ہیں بلکہ کفر اسلام یا تفسیق و تذلیل کے ہیں
الحمد للہ اہل حدیث علماء اجتہادی مسائل میں جو اختلاف ہے اس میں تفسیق و تذلیل بہت کم ہے جو ایسے مسائل میں ایسا کرتا ہے حقیقت میں وہ اہل حدیث نہیں ہے نام چاہے وہ اہل حدیث ہی کیوں نا رکھتا ہو، اور رہی بات عقائد کی تو اس اختلاف أصلا موجود ہی نہیں ہے اہل حدیث علماء کے درمیان إلا ما شاء اللہ
 
Top