ذیشان خان

Administrator
صحابہ کرام کے ما بین پیش آنے والے احتلافات سے متعلق اہل سنت والجماعت کا عقیدہ

✍⁩ ڈاکٹر أمان الله محمد إسماعيل

امت محمدیہ میں صحابہ کرام علی الاطلاق سب سے افضل ہیں۔
صحابہ کرام میں خلفاء اربعہ ابو بکر ، عمر، عثمان اور علی رضی اللہ عنہم بالترتیب سب سے افضل ہیں۔
صحابہ کرام کے بے شمار فضائل نصوص وحی میں کثرت کے ساتھ وارد ہیں۔
قرآنی نص کے مطابق اللہ تعالی تمام صحابہ کرام سے راضی و خوش ہے۔
خلیفہ ثالث عثمان غنی رضی اللہ عنہ کے زمانہ خلافت میں فتنوں کا آغاز ہوا، اور اسی فتنے میں عثمان رضی اللہ عنہ کی شہادت پیش آئی۔
عثمان رضی اللہ عنہ کی شہادت کے بعد صحابہ کرام کے ما بین کچھ اختلافات رونما ہوئے، کچھ جنگیں پیش آئیں، جو جنگ جمل اور جنگ صفین کے نام سے موسوم ہیں۔
صحابہ کرام کے ما بین اختلافات سے متعلق مروی اکثر و بیشتر روایات و آثار جھوٹی ہیں، جنہیں دشمنان صحابہ شیعوں نے گڑھ لی ہیں۔
صحابہ کرام کے مساوی سے متعلق بعض روایات میں کچھ غلط چیزوں کی ملاوٹ کر دی گئی ہے ۔
بعض روایات میں کچھ صحیح چیزیں کم کر دی گئی ہے ہے۔
اس میں کوئی شک نہیں کہ صحابہ کرام کے ما بین واقع اختلافات سے متعلق بعض صحیح روایات ہیں، البتہ ان میں صحابہ کرام معذور ہیں۔
یا تو ان اختلافات میں صحابہ کرام نے اجتہاد کیا اور ان کا اجتہاد صحیح ثابت ہوا، یا ان کا اجتہاد غلط ثابت ہوا، اور دونوں صورتوں میں صحابہ کرام ماجور ہیں۔
معلوم ہوا کہ صحابہ کرام کے ما بین اختلاف، اجتہادی اختلاف تھا۔
ان تمام چیزوں کو سامنے رکھتے ہوئے اہل سنت والجماعت کا عقیدہ ہیکہ صحابہ کرام کے ما بین جو اختلافات پیش آئے ان میں خاموشی اختیار کرنا ہے۔
صحابہ کرام کی بعض اجتہادی غلطی کے سبب ان کا ذکر شر کرنا اہل سنت والجماعت کے عقیدہ کے خلاف ہے۔
لیکن افسوس کہ شیعوں کی کارستانیوں سے متاثر ہو کر بعض سنی مسلمان بھی صحابہ کرام کو لعن طعن کرنے میں پیچھے نہیں رہے، اور ان کے بارے میں زور دار قیل و قال کیا۔
ياد رکھیں! صحابہ کرام کا ذکر شر اور ان پر دانستہ و نا دانستہ لعن و طعن گناہ عظیم ہے، جسے بعض علما نے کفر سے تعبیر کیا ہے۔
صحابہ کرام کے ما بین اختلافات سے متعلق اہل سنت والجماعت کا منہج اور عقیدہ جاننے کے لیے کچھ کتابوں کا مطالعہ بہت مفید ہوگا:
1۔ منہاج السنہ لابن تیمیہ۔
2۔ فتنة مقتل عثمان رضي الله عنه للغبان.
3. خلافت و ملوکیت کی تاریخی و شرعی حیثیت لصلاح الدین یوسف رحمہ اللہ ۔
اللہ تعالی ہمیں تمام صحابہ کرام سے محبت کرنے اور سلف صالحین کے منہج پر قائم ودائم رکھنے کی توفیق بخشے ۔ آمین یا رب العالمین ۔
 
Top