ذیشان خان

Administrator
اے سلفیو(اہل حدیثو)!

ترجمانی ب🖊: صفی الرحمن ابن مسلم فیضی بندوی
جامع عمار بن یاسر۔ الجبیل۔ سعودی

آپ خود کو سلفی کہلا رہے ہیں تو، سلفی کا مطلب صرف بدعتیوں پہ رد نہیں، یا صرف جرح تعدیل(راویوں کے حالات کی جانچ اور اس پر حکم لگانا نہیں) نہ ہی صرف کسی کے تعلق سے ناراضگی کا اظہار، یا صرف لب کشائی، یا صرف بدعت کی مذمت کرنا ہے،
بلکہ حقیقی سلفی وہ ہے جو قیام اللیل( تھجد) میں بھی سلف کو فالو کرتا ہو، پنج وقتہ صلاة کی پابندی کرتا ہو، پہلی صف میں آنے کیلئے سبقت کرتا ہو، سلفی وہ ہے جس کے اندر خشیت الہی پایا جاتا ہو، سلفیت یہ ہے کہ بارگاہ اللہ عز و جل میں آنسو بہانا، گریہ و زاری کرنا، خوف الہی، و تضرع اختیار کرنا ۔
سلفیت کا مطلب ہے چھوٹے پہ رحم کرنا، مہمان نوازی، سخاوت، بردباری و صبر، والدین کے ساتھ حسن سلوک، رشتہ داریوں کو جوڑنا۔
سلفیت ایمان کی طرح سے ہے کہ اس کے ستر سے زیادہ شعبے(مرتبہ) ہیں،سب سے افضل شعبہ لا إله إلا الله کہنا ہے، اور سب سے کم تر شعبہ(مرتبہ) راستے سے تکلیف دہ چیز کو ہٹانا ہے۔

بالکل اسی طرح یہ سلفیت بھی ہے کہ سب سے اعلی و افضل توحید ہے، سنت رسول ہے، عقیدہ ہے، اسلام پہ ثابت قدمی ہے۔
اس سے کم درجہ میں کچھ آسان قسم کے اداب ہیں، جیسے، راستہ سے تکلیف دہ چیز کا دور کرنا، ضرورت مندوں کی امداد، مظلوموں و مصیبت زدہ لوگوں کی مدد، مہمان نوازی، دوستوں کی خدمت،
یہ سلفیت ہے۔
تو سچے سلفی بن کر رہو، ہر چیز سلف کے طریقہ پر ہو ظاہری و باطنی دونوں طور سے۔
اس کو حقیقی سلفی کہتے ہیں۔
 
Top