ذیشان خان

Administrator
[ هـكـذا فليكن المعلِّم ]
قال القفَّال في فتاويه: كان الرَّبيع بطيء الفهم فكرر الشافعي عليه مسألة واحدة أربعين مرة فلم يفهم وقامَ من المجلس حياء فدعاه الشافعي في خلوة وكرر عليه حتى فهِم!
وقال له يوما : يا ربيع لو أمكنني أن أطعمك العلم لأطعمتك!
طبقات الشافعية الكبرى للسبكي (١٣٤/٢)
______________________________
بسم الله الرحمن الرحيم

معلم ہو تو ایسا

قفال رحمہ اللہ اپنے فتاوے میں لکھتے ہیں کہ ربیع رحمہ اللہ کندذہن تھے، جلدی وہ مسائل سمجھ نہیں پاتے تھے، اس لیے امام شافعی رحمۃ اللہ علیہ نے ایک مسئلہ کو چالیس بار انہیں سمجھایا مگر پھر بھی نہیں سمجھ سکے، بہرحال شیخ ربیع رحمہ اللہ مجلس سے مارے شرم وحیا کے چلے گئے، ان کو امام شافعی نے اپنے پاس تنہائی میں بلایا اور اسی مسئلے کو بار بار پھر سمجھایا، یہاں تک ربیع صاحب اس مسئلے کو سمجھ گئے، اور ایک دن امام شافعی نے ان سے کہا کہ اے ربیع اگر علم کھلانے والی کوئی چیز ہوتی تو میں تم کو کھلا دیتا-

ترجمانی: عبیداللہ بن شفیق الرحمٰن اعظمی محمدی مہسلہ
استاد : جامعہ محمدیہ مہسلہ کوکن مہاراشٹر
 
Top