ذیشان خان

Administrator
بسم الله الرحمن الرحيم وبه نستعين

ہم مسلمانوں کا ایک نیوز چینل ہونا چاہیے

ازقلم: عبیداللہ بن شفیق الرحمٰن اعظمیؔ محمدیؔ مہسلہ
.........................................................
نیوز چینل اور میڈیا کی کیا اہمیت اور افادیت ہے دنیا کا بچہ بچہ اس سے واقف ہے، لیکن افسوس کی بات ہے کہ ہندوستان میں ہم مسلمانوں کا کوئی ایک بھی نیوز چینل نہیں ہے اور کوئی مناسب دعوتی پلیٹ فارم نہیں ہے سوائے اسٹیج اور منبر ومحراب کے، ہم سب اچھی طرح جانتے ہیں کہ موجودہ میڈیا کے نمائندے سب چور اور خائن ہیں، جھوٹ بولنے والے ہیں، پیسے پر بکے ہیں سوائے ایک دو چینل کے، آج گودی میڈیا نے ملک کی جو حالت بنا رکھی ہے ایسے وقت میں شدید ضرورت محسوس ہو رہی ہے کہ ہمارا بھی ایک پلیٹ فارم ہونا چاہیے تاکہ نیوز چینل کے ذریعے ہم بھی عصر حاضر کے ابھرتے فتنوں کا سدباب کر سکیں اور گودی میڈیا کی گندی سیاست سے ملک وملت کی حفاظت کر سکیں، ہندو ومسلم منافرت کا خاتمہ کر سکیں اور اپنی بات کو ملک کے کونے کونے میں بآسانی پہنچا سکیں، حق وانصاف کی آواز پوری دنیا میں عام کر سکیں، ملک میں ہو رہے کمزوروں پر مظالم کا حقیقی چہرہ لوگوں کے سامنے مکمل پیش کر سکیں، کیوں کہ آج سب لوگ چینل سے جڑے ہوئے ہیں اب لوگ دیکھتے زیادہ ہیں اور پڑھتے کم ہیں اور عوام و خواص سبھوں کی زندگی میں نیوز چینل کے اثرات بھی غیر معمولی مرتب ہو چکے ہیں-
قارئین کرام! جب نیوز چینل کی بات شروع ہوتی ہے تو سب سے پہلے ہم بھارتی مسلمان پیسے اور غربت کا رونا روتے ہیں، وسائل کی کمی کا رونا روتے ہیں جب کہ بیس کروڑ سے زائد بھارتی مسلمانوں کے لیے چینل کا خرچ کوئی معنی نہیں رکھتا ہے، اگر سارے مسلمان یکجٹ ہوکر صرف ایک ایک روپیہ خرچ کریں تو دن بھر میں چینل کی بنیاد رکھی جا سکتی ہے، میرے کہنے کا مطلب یہ ہے نیوز چینل کے لیے پیسہ رکاوٹ نہیں ہے، بھارت کے مسلمان بڑے دل والے ہیں لیکن ان کی صحیح ذہن سازی نہیں ہو پاتی ہے، علماء آپس میں مسلکی مسائل میں الجھا کر رکھتے ہیں، تبلیغی اجتماعات میں کروڑوں خرچ کرتے ہیں، جلسوں اور کانفرنسوں میں لاکھوں خرچ کرتے ہیں، شادی میں لوگ اپنا پیسہ پانی کی طرح بہاتے ہیں، عیاشی میں دولت لٹاتے ہیں، اسراف اور فضول خرچی کرتے ہیں، منشیات میں خرچ کرتے ہیں لیکن ملی وسماجی اور ملک کی تعمیر وترقی کے لیے خرچ کرنے پر تیار نہیں ہوتے ہیں، اسی لیے تو ابھی تک اپنا ایک چینل تیار نہیں ہوسکا ہے پھر ہم گودی میڈیا گودی میڈیا صبح وشام رٹ لگائے رہتے ہیں، اس سے کچھ کام ہونے والا نہیں ہے، لہٰذا ہم اپنے تمام مسلم سیاسی اثر ورسوخ والوں سے اور تمام دینی وملی تنظیموں کے ذمہ داران سے یہ اپیل کرتے ہیں کہ آپ وقت کی نزاکت کو سمجھیں اور مناسب قدم اٹھائیں، اور ایک نیوز چینل جو حق وانصاف پر مبنی ہو اس کی تحریک چھیڑیں، یہ کام تو مشکل ضرور ہے لیکن ناممکن نہیں، آدمی کام کے لیے ٹھان لے اور اللہ پر بھروسہ کرتے ہوئے اپنے مشن پر لگ جائے تو کام آسان ہو جاتا ہے اللہ کی مدد اور تائید حاصل ہوتی ہے، اللہ تعالٰی سے دعا ہے کہ اللہ تعالٰی ہمارے ملک کی فضا کو پرامن بنا دے اور جو ہمارے مسائل اور مشکلات ہیں اللہ تعالٰی اسے دور کر دے آمین-
═════ ❁✿❁ ══════
 
Top