ذیشان خان

Administrator
اعمال کی قبولیت کی اہم نشانی !!

✏ - امام ابن القيم رحمه الله فرماتے ہیں :

⬅ "تمہارے عمل کے قبول ہونے کی نشانی یہ ہے کہ تمہیں اپنا عمل بہت ہی حقیر، ناکافی اور کمتر معلوم ہو۔ حتی کہ اللہ کے نیک بندے ہر نیکی کرنے کے بعد استغفار کرتے ہیں (کہ کہیں اس نیکی میں کوتاہی نہ ہوئی ہو)۔

⬅ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم بھی جب نماز سے سلام پھیرتے تو اللہ سے تین بار استغفار کرتے، اسی طرح اللہ نے اپنے بندوں کو حج کے بعد استغفار کا حکم دیا ہے، اور قيام الليل کے بعد استغفار کرنے والوں کی تعریف کی ہے، اور نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے بھی وضو کے بعد توبہ و استغفار کو مشروع ٹھہرایا ہے۔

⬅ الغرض جسے اپنے رب کے حق کا اندازہ ہو جائے، اور اس کے بالمقابل وہ اپنے عمل کی مقدار دیکھے اور اپنی ذات کے عیوب پر نظر ڈالے؛ تو اس کے پاس ہر عمل کے بعد استغفار کرنے اور اس عمل کو ناکافی اور کم تر سمجھنے کے علاوہ کوئی چارہ نہ ہو!"

📙 |[ مدارج السالكين : ٦۲/۲ ]|
 
Top