ذیشان خان

Administrator
ہمارے ہاں کچھ باطل قسم کے کلمات رواج پا رہے ہیں ...

◼جیسے لوگ کہتے ہیں : "خالق کے لئے مخلوق کو چھوڑ دیں۔"

◼اسی طرح ایک عبارت ہے : "ہر کسی نے اپنا اپنا حساب دینا ہے۔ سب نے اپنی زندگی جینی ہے یا سب کا قبر میں اکیلے کا حساب ہوگا۔"

🍂 شیخ صالح بن فوزان الفوزان - حفظه الله تعالیٰ - فرماتے ہیں :

"یہ درست کلام نہیں، بلکہ منکر کلام ہے۔ مخلوق کو اس طرح چھوڑنا جائز نہیں کہ وہ جو مرضی کرتے پھریں اور ﷲ کو اپنا حساب دیں، آپ پر لازم ہے کہ آپ حق و باطل کو کھل کر بیان کردیں، مخلوق کے اعمال کو خالق پر چھوڑنا بھی درست نہیں، کیوں کہ ہم اس امت کے فرد ہیں جو نیکی کا حکم دیتی اور برائی سے منع کرتی ہے۔ سو، آپ پر واجب ہے کہ رب تعالی کی طرف دعوت دیتے رہیں۔ ایسے جملوں پر نہ ریجھ جائیں۔"

📜 [ شرح إغاثة اللهفان (١٤٣٨/٥/١٥) ]
 
Top