ذیشان خان

Administrator
اے ایمان والو! ﷲ سبحانه وتعالیٰ کو یاد کرو کثرت سے یاد کرنا ...

مفسر قرآن شیخ عبد الرحمن بن ناصر السعدي - رحمه ﷲ تعالی - فرماتے ہیں :

”يأمر تعالى المؤمنين، بذكره ذكرا كثيرًا، من تهليل، وتحميد، وتسبيح، وتكبير وغير ذلك، من كل قول فيه قربة إلى اللّه، وأقل ذلك، أن يلازم الإنسان، أوراد الصباح، والمساء، وأدبار الصلوات الخمس، وعند العوارض والأسباب.

👈🏼 "ﷲ تبارك و تعالیٰ اہل ایمان کو حکم دیتا ہے کہ وہ تہلیل و تحمید اور تسبیح و تکبیر وغیرہ کے ذریعے سے کہ جن میں سے ہر کلمہ تقرب الٰہی کا وسیلہ ہے نہایت کثرت کے ساتھ ﷲ تعالیٰ کا ذکر کریں۔ قلیل ترین ذکر یہ ہے کہ انسان صبح شام اور پانچوں نمازوں کے بعد کے اذکار کا التزام کرے نیز مختلف عوارض اور اسباب کے وقت ﷲ تعالیٰ کا ذکر کرے۔

وينبغي مداومة ذلك، في جميع الأوقات، على جميع الأحوال، فإن ذلك عبادة يسبق بها العامل، وهو مستريح، وداع إلى محبة اللّه ومعرفته، وعون على الخير، وكف اللسان عن الكلام القبيح.“

👈🏼 اور مناسب یہی ہے کہ تمام اوقات اور تمام احوال میں ﷲ تعالیٰ کے ذکر پر دوام کرے، کیونکہ یہ ایک ایسی عبادت ہے جس کے ذریعے سے عمل کرنے والا آرام کرتے ہوئے بھی سبقت لے جاتا ہے اور یہ ﷲ تعالیٰ کی محبت اور اس کی معرفت کی طرف دعوت دیتا ہے، بھلائی پر مددگار ہے اور زبان کو گندی باتوں سے باز رکھتا ہے۔"

📜 - |[ تيسير الكريم الرحمن في تفسير كلام المنان، طبع دار السلام : ٧٨٣/٢٢ ]|
 
Top