ذیشان خان

Administrator
نیت کی فضیلت

علامہ ابن رجب حنبلی/ابن القیم الجوزی/امام غزالی رحمھم الله

سیدنا عمر ؓ نے فرمایا ”سب سے افضل ان فرائض کی ادائیگی میں ہے جنہیں اللہ تعالٰی نے فرض فرمایا ہے ،اور جن چیزوں کو حرام قرار دیا ان سے باز آجانا ہے ،اور نیتوں کی صدق و سچائی ان امور میں جو اللہ تعالٰی سے متعلق ہیں"

بعض سلف صالحین ؒ نے فرمایا : ”بسا اوقات ایک بڑا عمل نیت کی بدولت چھوٹا ہوجاتا ہے “

یحییٰ بن ابی کثیر ؒ نے فرمایا "اے لوگو ! نیتوں کو ا چھی طرح سیکھو کیونکہ نیت عمل کے مقابلہ میں زیادہ موثر ہے “۔

سیدنا ابن عمر ؓ نے ایک شخص کو احرام باندھنے وقت بلند آواز سے یہ دعا پڑھتے ہوئے سنا :اللھم انی ارید الحج والعمرہ “ اے اللہ میں حج اور عمرہ کرنے کا ارادہ کرتا ہوں‘‘آپ ؓ نے فرمایا تم اپنے حج اور عمرہ کرنے کی لوگوں کو خبر دینا چاہتے ہو ،اور اللہ تعالٰی تمہا رے دل کی بات کو بات کو نہیں جانتا ہے ؟اور یہ اس لئے کہ نیت تو دل ارادہ اور قصد کانام ہے ،اور عبادت میں نیت کو الفاظ سے ادا کرنا ضروری نہیں ہے ۔

📚پیشکش: مجموعہ اللؤلؤ والمرجان
 
Top