ذیشان خان

Administrator
سب سے بہتر اور عقلمند

✍⁩افتخار عالم مدنی

حضرت عبد اللہ بن عمر رضی اللہ عنہما بیان کرتے ہیں کہ:

"میں اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے ساتھ تھا کہ ایک انصاری شخص آیا، اس نے آپ کو سلام کیا، پھر دریافت کیا کہ اے اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم!

{أي المؤمنين أفضل}

"مومنوں میں کون سب سے بہتر ہے؟"

تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:

{أحسنهم خلقا}

"جو ان میں سب سے اچھے اخلاق والا ہے۔"

اس نے پھر دریافت کیا:

{فأي المؤمنين أكيس}

"مومنوں میں سب سے عقلمند کون ہے؟"

تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:

{أكثرهم للموت ذكرا وأحسنهم لما بعده استعدادا، أولئك الأكياس}

"جو ان میں موت کو سب سے زیادہ یاد کرنے والے ہیں اور موت کے بعد کی زندگی کے لئے سب اچھی تیاری کرنے والے ہیں، وہی لوگ عقلمند ہیں۔"

(سنن ابن ماجہ:4259)

معلوم ہوا کہ اللہ کی نظر میں:

1- بہترین شخص وہ نہیں جو خواہشات نفس کی تسکین کے لئے کسی بھی حد تک جا گرے، بلکہ بہترین شخص وہ ہے جو کسی بھی قیمت پر اپنے ضمیر اور حسن اخلاق کا سودا نہ کرے۔

2- بڑا عقلمند وہ نہیں جو دنیاوی زندگی کو زیادہ اہمیت دے اور دنیوی کامیابی کے لئے ہی تمام تر جد وجہد کرے، بلکہ بڑا عقلمند وہ ہے جو موت کو ہمیشہ یاد رکھے اور آخرت کی زندگی کو ترجیح دیتے ہوئے اس کے لئے اچھی سے اچھی تیاری کرے۔

ان دنوں کورونا وائرس کی وجہ سے لوگوں میں موت کا ڈر تو ضرور دیکھا جا رہا ہے مگر افسوس کہ فکر آخرت اور ما بعد الموت کی تیاری کما حقہ اب بھی نظر نہیں آ رہی ہے۔

اگر لوگ واقعی اس کے تئیں سنجیدہ اور بیدار ہوتے تو ضرور اللہ اور اس کے بندوں کے ساتھ حسن اخلاق سے پیش آتے، نہ حقوق اللہ کی انجام دہی سے غافل ہوتے اور نہ حقوق العباد کی ادائیگی میں کوتاہی برتتے۔

اللہ ہم سب کو اچھی سمجھ اور اچھے عمل کی توفیق دے۔
 
Top