ذیشان خان

Administrator
عجیب وغریب اتفاق

✍ فاروق عبد اللہ نراین پوری

علامہ بلقینی کی ولادت 724 میں اور وفات 805 میں ہوئی ہے۔
ٹھیک ان سے ایک سال بعد علامہ عراقی کی ولادت بھی ہے اور وفات بھی۔ یعنی علامہ عراقی کی ولادت ان سے ایک سال بعد 725 میں ہوئی ہے، اور وفات 806 میں۔

یہ دونوں آٹھویں صدی ہجری کے مشہور محدث تھے، اور ان دونوں کے لڑکے بھی مشہور محدث ہوئے۔

دونوں کے لڑکوں کی پیدائش ایک ہی سال ہوئی، یعنی 762 ہجری۔ اور وفات بھی تقریبا ساتھ ساتھ، دونوں کی وفات میں صرف دو سال کا فاصلہ ہے۔

جلال الدین عبد الرحمن بن عمر بن رسلان البلقینی کی وفات 824 میں ہوئی ہے۔
اور ابو زرعہ احمد بن عبد الرحیم العراقی کی وفات 826 میں۔

دونوں نے علم حدیث کی کافی خدمات کیں۔

جلال الدین البلقینی نے ”الإفهام لما وقع في البخاري من الإبهام“ کے نام سے صحیح بخاری کی شرح لکھی۔

اور ابو زرعۃ العراقی کی مشہور کتاب تحفة التحصيل في ذكر رواة المراسيل ہے۔

علامہ بلقینی کا ایک اور لڑکا تھا صالح بن عمر بن رسلان البلقيني، جن کی وفات بعد میں 868 میں ہوئی ہے، انہوں نے بھی بخاری کی شرح لکھی تھی جس کا نام رکھا تھا: "الغيث الجاري على صحيح البخاري"۔
 
Top