ذیشان خان

Administrator
طاغوت تو بہت سارے ہیں مگر ان کے سرغنہ پانچ ہیں

شیخ محمد بن عبد الوہاب رحمہ ﷲ فرماتے ہیں:

1- شیطان: غیر ﷲ کی عبادت کی طرف دعوت دینے والا۔
دلیل ﷲ کا یہ فرمان ہے :
أَلَمْ أَعْهَدْ إِلَيْكُمْ يَا بَنِي آدَمَ أَنْ لا تَعْبُدُوا الشَّيْطَانَ إِنَّهُ لَكُمْ عَدُوٌّ مُبِينٌ (یٰسٓں:60)
’’اے بنی آدم کیا ہم نے تمہیں حکم نہیں دیا تھا کہ شیطان کی عبادت مت کرو وہ تمہارا کھلا دشمن ہے‘‘

2- ظالم حکمران: جو ﷲ کے احکامات کو تبدیل کرتا ہے۔
أَلَمْ تَرَ إِلَى الَّذِينَ يَزْعُمُونَ أَنَّهُمْ آمَنُوا بِمَا أُنْزِلَ إِلَيْكَ وَمَا أُنْزِلَ مِنْ قَبْلِكَ يُرِيدُونَ أَنْ يَتَحَاكَمُوا إِلَى الطَّاغُوتِ وَقَدْ أُمِرُوا أَنْ يَكْفُرُوا بِهِ وَيُرِيدُ الشَّيْطَانُ أَنْ يُضِلَّهُمْ ضَلالا بَعِيدًا (النساء:60)
’’کیا آپ نے ان لوگوں کو دیکھا ہے جن کا خیال ہے وہ ایمان لائے ہیں اس پر جو تیری طرف نازل ہوا ہے اور اس پر جو تجھ سے پہلے نازل ہوا ہے وہ چاہتے ہیں کہ فیصلے طاغوت کے پاس لیجائیں حالانکہ انہیں حکم دیا گیا ہے کہ وہ طاغوت کا انکار کریں شیطان چاہتا ہے کہ انہیں دور کی گمراہی میں مبتلا کردے‘‘

3- جو ﷲ کے نازل کردہ شریعت کے مطابق فیصلے نہیں کرتا: (موجودہ زمانے کے مسلم حکمرانوں کا کفر و ارتداد واضح ہوجاتا ہے اس لیے کہ وہ ﷲ کی شریعت کے مطابق فیصلے نہیں کرتے بلکہ مسلم ممالک میں انہوں نے انسانوں کے بنائے ہوئے قوانین رائج کر رکھے ہیں۔)

ﷲ تعالیٰ کا فرمان ہے۔
وَمَنْ لَمْ یَحْکُمْ بِمَآ اَنْزَلَ ﷲُ فَاُولٰئِکَ ھُمُ الکٰفِرُونَ (المائدۃ:44)
’’جو ﷲ کی نازل کردہ قانون کے مطابق فیصلے نہیں کرتے وہی لوگ کافر ہیں‘‘۔

4- جو شخص علم غیب کا دعویٰ کرتا ہے :
ﷲ تعالیٰ کا فرمان ہے۔
عَالِمُ الْغَيْبِ فَلا يُظْهِرُ عَلَى غَيْبِهِ أَحَدًا،إِلا مَنِ ارْتَضَى مِنْ رَسُولٍ فَإِنَّهُ يَسْلُكُ مِنْ بَيْنِ يَدَيْهِ وَمِنْ خَلْفِهِ رَصَدًا (الجن:26-27)
’’(وہ ﷲ) عالم الغیب ہے اپنے غیب پر کسی کو مطلع نہیں کرتا مگر اپنے رسولوں میں سے جسے چاہے پھر چلاتا ہے اس کے آگے پیچھے ایک نگران‘‘۔

دوسری جگہ ارشاد ہے۔
وَعِنْدَهُ مَفَاتِحُ الْغَيْبِ لا يَعْلَمُهَا إِلا هُوَ وَيَعْلَمُ مَا فِي الْبَرِّ وَالْبَحْرِ وَمَا تَسْقُطُ مِنْ وَرَقَةٍ إِلا يَعْلَمُهَا وَلا حَبَّةٍ فِي ظُلُمَاتِ الأرْضِ وَلا رَطْبٍ وَلا يَابِسٍ إِلا فِي كِتَابٍ مُبِينٍ (الانعام:59)
’’اسی (ﷲ) کے پاس ہیں غیب کی چابیاں انہیں صرف ﷲ ہی جانتا ہے اور وہ جانتا ہے جو کچھ خشکی اور جو کچھ سمندر میں ہے۔ نہیں گرتا کوئی پتہ مگر وہ اسے جانتا ہے اورنہ ہی کوئی اناج کا دانہ زمین کے اندھیروں میں نہ تر یا خشک مگر واضح کتاب میں ہے‘‘۔

5- ﷲ کے علاوہ جس کی عبادت کی جائے اور وہ اُس پر راضی ہو:
ﷲ تعالیٰ کا ارشاد ہے۔
وَمَنْ يَقُلْ مِنْهُمْ إِنِّي إِلَهٌ مِنْ دُونِهِ فَذَلِكَ نَجْزِيهِ جَهَنَّمَ كَذَلِكَ نَجْزِي الظَّالِمِينَ (الانبیاء:29)
’’اور جس نے کہا کہ میں ﷲ کے علاوہ معبود ہوں تو اس کو ہم جہنم کی سزا دیں گے ہم ظالموں کو اسی طرح سزا دیتے ہیں‘‘۔

یہ بات یاد رکھنی چاہیے کہ انسان صرف اسی وقت مومن بن سکتا ہے جب وہ طاغوت کا انکار کر دے۔ (الدرر السنیۃ:161-163 /10)
 
Top