ذیشان خان

Administrator
چار رکعت سنت کیسے پڑھے ؟

مقبول احمد سلفی
افضل یہی ہے کہ دن اور رات کی سنت و نفل دو دو رکعت کرکے پڑھے لیکن اگر کسی نے چار سنت اکٹھے پڑھا تو یہ بھی جائز ہے جیساکہ دلیل سے واضح ہے ۔
مسئلہ اس میں ہے کہ چار سنت کس طرح پڑھے ؟
تو اس کا جواب یہ ہے کہ ظہر کی نماز کی طرح چار ادا کرلے کفایت کرجائے مگر یہ بات واضح رہے کہ نبی ﷺ سے چار سنت کے مکمل وضاحت نہیں ملتی جس کی وجہ سے علماء میں اختلاف ہے کہ درمیان میں تشہد کیا جائے گا کہ نہیں ؟ تو اس معاملے میں وسعت ہے دونوں طریقوں سے نماز ادا کی جاسکتی ہے ۔
رہا قرآن پڑھنے کا تو چاروں رکعات میں بھی نبی ﷺ سے سورہ فاتحہ کے بعد قرآن پڑھنے کا ثبوت ملتا ہے ، اس لئے چاروں میں پڑھے .

واللہ اعلم
 
Top