ذیشان خان

Administrator
نصیحۃ غالیۃ

✍مامون رشید ہارون رشید سلفی.

استاد محترم فضیلۃ الدكتور محمد ابراہیم بن محمد ہارون مدنی حفظہ اللہ فرماتے ہیں: ایک طالب علم کے لیے دو چیزیں نہایت ضروری ہیں.
1️⃣ صبر،( یعنی التصدر قبل التأہل کا مظاہرہ نہ کرے بلکہ جب تک کسی علم میں پختگی حاصل نہ کر لے زبان نہ کھولے، اسی طرح استاد کے بتانے سے پہلے یا استاد کی بات ختم ہو جانے سے پہلے جتانے اور ہمادانی کا اظہار کرنے کے ارادے سے کچھ نہ بولے استفسار مقصود ہو تو بلا شبہ یہ طالب علم کا شرعی فطری اور عقلی حق ہے.)

2️⃣ استاد کی رہنمائی( یعنی خود سے کتابی بن کر کتاب سے کچھ پڑھ کر فتویٰ بازی نہیں کرنا ہے بلکہ کسی بھی فن کو سیکھنے کے لیے اس فن کے متخصص استاد کی رہنمائی اور ان کے سامنے ایک لمبے عرصے تک زانوئے تلمذ تہ کرنا ضروری ہے ورنہ انحراف، کجروی اور لا منہجیت کے علاوہ کچھ ہاتھ نہ آئے گا.)

آپ کی یہ دونوں باتیں امام شافعی رحمہ اللہ کے اس شعر میں موجود ہیں:"أخي لن تنال العلم إلا بستة
سأنبيك عن تفصيلها ببيان

ذكاء وحرص واجتهاد وبلغة
وصحبة أستاذ وطول زمان

"صحبۃ استاذ" سے استاد کی رہنمائی اور "طول زمان" سے صبر کا مفہوم ماخوذ ہے.
 
Top