ذیشان خان

Administrator
جدید ٹیکنالوجی کا جائز استعمال ہو

تحریر: حافظ عبدالرشید عمری

دین اسلام کی نشر و اشاعت میں ساری دنیا میں موجود جدید ٹیکنالوجی کے جائز آلات کا شرعی حدود کے دائرے میں رہ کر استعمال کیا جائے
تو دین اسلام کی نشر و اشاعت میں جدید ٹیکنالوجی کی اہمیت سے انکار نہیں کیا جا سکتا ہے۔

لیکن یہ بھی حقیقت ہے کہ وسائل و ذرائع ابلاغ میں جدید ٹیکنالوجی کی تیز رفتار ترقی کے باعث حقیقی کاغذ پر ہونے والی خط و کتابت اور حقیقی کتابوں سے مطالعہ کی قدیم روایات تقريبا طاق نسیان ہو گئی ہیں،
جس کی وجہ سے اکثر اہل علم میں بھی دینی علوم میں مہارت ناپید ہوتی جارہی ہے
کبھی بھی بدل اصل کا قائم مقام ہو نہیں سکتا ہے
مثال کے طور پر کاغذات کی صورت میں دستیاب حقیقی کتابوں سے مطالعہ کی صورت میں یاد داشت کی حیثیت سے جو افادیت ہے
ایسی افادیت کا حصول پی ڈی ایف فائل میں دستیاب کتابوں کے مطالعہ سے ممکن نہیں ہے۔

حالانکہ کمپیوٹر کی ایجاد اور انٹرنیٹ کی موجودگی کے باوجود اسمارٹ فون کے وجود سے قبل تک دینی و دنیاوی اور انفرادی و اجتماعی تعلقات کے لئے استعمال ہونے والے روابط میں حقیقی قلم و قرطاس کو ہی اولین حیثیت حاصل تھی ۔
اسمارٹ فون کی ایجاد سے قبل کمپیوٹر اور انٹرنیٹ کا استعمال دنیا کے صرف مالدار لوگ کرتے تھے،
کیوں کہ دنیا کے تما غریب عوام تک کمپیوٹر اور انٹرنیٹ تک رسائی بہت دشوار تھی۔
لیکن اسمارٹ فون کی ایجاد اور پوری دنیا میں انٹرنیٹ کے سستے داموں میں دستیاب ہونے کے باعث پوری دنیا کے تمام انسانوں کے لئے انٹرنیٹ کا استعمال بہت آسان ہو گیا ہے۔
ہر انسان کے لئے اسمارٹ فون اور انٹرنیٹ کا استعمال اس کی ضروریات زندگی میں شمار ہونے لگا ہے۔
لیکن یہ بھی ناقابل انکار حقیقت ہے کہ دنیا میں وجود میں آنے والی ٹیکنالوجی کی ہر ترقی سے مسلمانوں کی اکثریت میں علمی و عملی حیثت سے ایمانی تنزلی پیدا ہوئی ہے ۔
اور یہ ایک ایسی اٹل حقیقت ہے جس کے انکار کی کوئی گنجائش نہیں ہے
اللہ تعالٰی نے فرمایا:
و قليل من عبادى الشكور (سبأ: ١٣)
اور میرے بندوں میں سے شکر گزار بندے کم ہی ہوتے ہیں۔
جدید ٹیکنالوجی کے غیر شرعی استعمال سے اکثر مسلمان حقوق اللہ اور حقوق العباد میں غفلت کا شکار ہو گئے ہیں۔
جدید ٹیکنالوجی کے کون سے آلات جائز ہیں
اور جائز آلات کے استعمال کے شرعی حدود کیا ہیں
ہر مسلمان کو جدید ٹیکنالوجی کے استعمال سے متعلق شرعی حیثیت سے تفصیلی تعلیمات اور احکامات سے واقفیت حاصل کرنا ضروری ہے۔
ورنہ جدید ٹیکنالوجی کے ناجائز اور غیر شرعی استعمال کے سبب اللہ تعالٰی کی ناراضگی کا مستحق ہو کر ایک مسلمان اپنی آخرت برباد کر سکتا ہے۔

اللہ تعالٰی ہر مسلمان کو اس دنیا میں رہ کر زادہء آخرت تیار کرنے کی توفیق عطا فرمائے، آمین ۔

اللہ تعالٰی امت مسلمہ کو جدید ٹیکنالوجی کے تمام آلات کا شریعت کے صحیح استعمال کرنے کی توفیق عطا فرمائے ،آمین ۔
 
Top