ذیشان خان

Administrator
ایک سبق آموز واقعہ

فضیل بن عیاض رحمہ اللہ فرماتے ہیں:
میں نے "صبر" ایک چھوٹے بچے سے سیکھا۔ ایک بار کا واقعہ ہے کہ میں مسجد گیا تو کیا دیکھتا ہوں کہ مسجد کے قریب ایک عورت اپنے گھر کے اندر اپنے بچے کو مار رہی ہے، اور وہ بچہ چیخ و چلا رہا ہے۔ بالآخر تنگ آ کر وہ بچہ دروازہ کھول کر باہر کی طرف بھاگ نکلا، اس کے بعد ماں نے بھی اندر سے دروازہ بند کر لیا۔
فضیل رحمہ اللہ فرماتے ہیں: کچھ دیر کے بعد جب میں واپس ہوا تو پھر دیکھتا ہوں کہ وہی بچہ تھوڑی دیر رونے کے بعد دروازے کی چوکھٹ پر سو گیا ہے گویا وہ اس طرح کرکے اپنی ماں سے دروازہ کھولنے کے لئے منت و سماجت کر رہا ہو، چنانچہ بچے کو اس حالت میں دیکھ کر ماں کا دل بھر آیا اور دروازہ کھول دیا۔

یہ واقعہ دیکھ کر فضیل رحمہ اللہ رونے لگے یہاں تک کہ ان کی داڑھی آنسوؤں سے تر ہو گئی اور زبان سے بے ساختہ بول پڑے:
"سبحان اللہ! اگر بندہ اللہ کے دروازے پر اسی طرح صبر کرکے ڈٹ جائے تو اللہ تعالی ضرور اس کے لئے اپنا دروازہ کھول دے گا"۔

ابو درداء رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں:
"اللہ کی بارگاہ میں کثرت سے دعا کرو کیونکہ جو شخص بکثرت دروازہ کھٹکھٹائے گا ایک نہ ایک دن وہ دروازہ ضرور اس کے لئے کھلے گا"۔

ــــــــــــــــــــــــــــــــ
📚 مصنف ابن أبي شيبة 6/22

قناة_سوكنة_السلفية
 
Top