ذیشان خان

Administrator
کیا اذان کہنے والا ہی اقامت کہے گا ؟

(1)رسول صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ! جو اذان دے وہی اقامت کہے ۔
یہ حدیث ضعیف ہے۔ (دیکھیں سلسلہ الضعیفہ # ٣٥)
(2)حضرت عبداللہ بن زید رضی اللہ عنہ سے مروی ہے کہ اذان کو میں نے خواب میں دیکھا تھا لہٰذا میری تمنا تھی کہ مجھے موذن مقرر کیا جائے آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: تم اقامت کہو۔
یہ حدیث بھی ضعیف ہے۔ دیکھیں: (ضعیف ابو داؤد #١٠٢)
پہلی حدیث سے ثابت ہوتا ہے کہ اذان دینے والا ہی اقامت کہے لیکن وہ ضعیف ہے اور دوسری حدیث سے یہ معلوم ہوتا ہے کہ موذن کے علاوہ دوسرا شخص بھی اقامت کہ سکتا ہے لیکن وہ بھی ضعیف ہے ، لہٰذا چونکہ اصل اباحت ہے اس لئے موذن کے علاوہ کسی اور کا اقامت کہنا جائز ہے۔
راحج بات
چونکہ دونوں احادیث ضعیف ہیں اس لئے دونوں طرح ہی بہتر ہے البتہ اس مصلحت کے پیش نظر کہ جو اذان دیتا ہے اگر وہی اقامت کہےگا تو اس سے نظم و ضبط رہتا ہے ، یہ عمل بہتر ہے ۔

واللہ اعلم​
 
Top